نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) ایکٹ میں ترمیم کا  آرڈیننس جاری کردیا گیا ہے جس کے تحت  وفاقی حکومت کو اضافی سرچارج اور  بجلی مزید مہنگی کرنے کا اختیار مل گیا ہے۔

 آرڈیننس کے مطابق حکومت بجلی کے بلوں پر 10 فی صد سرچارج وصول کرسکے گی، نیپرا ایکٹ میں ترمیم کے آرڈیننس کا اطلاق فوری ہوگا، حکومت کو ایک روپے 40 پیسےفی یونٹ تک سر چارج لگانےکا اختیار مل گیا ہے۔

اس سے قبل مسلم لیگ ن کے سابقہ دور میں حکومت کو سرچارج عائد کرنے کا اختیار ختم کردیا گیا تھا۔

 آرڈیننس کے تحت حکومت کو آئندہ دو سال میں بجلی ساڑھے 5 روپےتک مہنگا کرنے کا اختیار ہوگا،عوام پر سرچارج کی مد میں 150 ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا۔

 آرڈیننس کے مطابق بجلی سسٹم کو سالانہ 1400 ارب روپے حاصل کرنا ہیں،حکومت نے سرکلر ڈیٹ کے حل کیلئے سرچارج لگانا ضروری قرار دیا ہے۔

ایکٹ میں ترمیم کے بعد نیپرا کو بجلی کی قیمتوں کے حوالے سے خود مختاری مل گئی ہے۔

Previous articleبعض سیاسی جماعتوں کے سرکردہ افراد شوگر مافیا کے ساتھ ہیں: ڈائریکٹر ایف آئی اے
Next articleصرف رجسٹرڈ ڈیلرز ہی چینی فروخت کر سکیں گے: وزیراعلیٰ پنجاب